عالمی ادارہ صحت کا پاکستان، افغانستان میں پولیو کے پھیلاؤ پر اظہارِ تشویش

فائل فوٹو
فائل فوٹو

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کی پولیو ایمرجنسی کمیٹی نے پاکستان اور افغانستان میں پولیو کے پھیلاؤ پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

پولیو ایمرجنسی کمیٹی نے کہا ہے کہ پاکستان میں پولیو کے پھیلاؤ کا خطرہ تاحال برقرار ہے، پاکستان میں اب بھی بچوں کی بڑی تعداد پولیو کے قطرے پینے سے محروم ہے۔

ڈبلیو ایچ او نے کہا ہے کہ سیاسی عدم استحکام، امن و امان کی صورتحال پولیو کے خاتمے میں رکاوٹ ہیں، پولیو ویکسین کا بائیکاٹ بھی بڑا مسئلہ ہے، افغانستان میں پولیو پروگرام کی ناکامی پاکستان کے پولیو پروگرام کو خطرے میں ڈال سکتی ہے۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ پاکستان سے پولیو وائرس کا ملاوی، موزمبیق جانا بھی پولیو کے عالمی پھیلاؤ کا سبب بن سکتا ہے۔

پولیو ایمرجنسی کمیٹی نے کہا ہے کہ بیرون ملک سفر کرنے والے پاکستانی اور افغان شہری پولیو ویکسینیشن ضرور کرائیں اور انہیں سرٹیفکیٹ جاری کیا جائے، ملاوی اور موزمبیق سے بیرون ممالک سفر کرنے والے بھی پولیو ویکسینیشن ضرور کرائیں۔



اپنی رائے کا اظہار کریں