آئی ایم ایف کا نگراں وزیرِ خزانہ سے معاہدے کی شرائط پر سختی سے عملدرآمد کا مطالبہ

فائل فوٹو
فائل فوٹو

نگراں وزیرِ خزانہ شمشماد اختر کی آئی ایم ایف حکام کے ساتھ ورچوئل میٹنگ ہوئی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایم ایف حکام نے وزیرِ خزانہ سے معاہدے کی شرائط پر سختی سے عملدرآمد کا مطالبہ کیا ہے۔

اس حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ میٹنگ میں ایکسچینج ریٹ، پاور اور گیس سیکٹر کے گردشی قرضوں پر بات چیت کی گئی ہے۔

ذرائع کے مطابق نگراں وزیرِ خزانہ نے مارکیٹ بیسڈ ایکسچینج ریٹ پر آئی ایم ایف کو اعتماد میں لیا اور کہا کہ ایکسچینج ریٹ کنٹرول کرنے کے لیے کوئی مصنوعی پالیسی نہیں بنائی جائے گی۔

شمشاد اختر نے آئی ایم ایف حکام کو یقین دہانی کرائی کہ ایکسچینج ریٹ مارکیٹ خود تعین کرے گی۔

ذرائع کے مطابق انہوں نے کہا کہ پاور سیکٹر کا گردشی قرضہ کم کرنے کے لیے ٹیرف ریٹ بڑھایا گیا ہے، جون 2024 تک پاور سیکٹر کا گردشی قرضہ 2128 ارب تک محدود کیا جائے گا، پاور سیکٹر کا گردشی قرضہ کم کرنے کے لیے سبسڈیز ختم کی جارہی ہیں۔

ذرائع کے مطابق نگراں وزیرِ خزانہ نے آئی ایم ایف حکام کو معاہدے کی شرائط پر عملدرآمد سے بھی آگاہ کیا اور اقتصادی جائزہ شروع ہونے سے قبل شرائط پر مکمل عملدرآمد کی یقین دہانی کرائی۔



اپنی رائے کا اظہار کریں