ناسا نے جیمز ویب ٹیلی اسکوپ سے لی گئیں ’تخلیقی ستون‘ کی نئی تصاویر جاری کردیں

فائل فوٹو
فائل فوٹو

امریکی خلائی ادارے ناسا نے طاقتور جیمز ویب ٹیلی اسکوپ سے لی گئیں مشہور تخلیقی ستونوں (Pillars of creation) کی واضح اور نمایاں نئی تصاویر جاری کردیں۔

ناسا نے اپنی ویب سائٹ پر ان تصاویر کو جاری کرتے ہوئے لکھا کہ یہ تصاویر زمین سے 6500 نوری سال کی دوری پر واقع ایگل نیبولا کی ہیں ، جسے انسان کی اب تک کی سب سے بڑی کھوج سمجھا جاتا ہے۔

ناسا کے مطابق اس سے قبل 1995 میں ہبل ٹیلی اسکوپ سے ان تخلیقی ستونوں کی تصاویر لی گئی تھیں پھر بعد ازاں 2014 میں بھی ان کی نئی تصاویر بنائی گئی تھیں۔ یہ جدید فلکیات کی سب سے مشہور اور حیرت انگیز تصویروں میں سے ایک تھیں۔

اس ایگل نیبولا کو تخلیقی ستون (Pillars of creation) کا نام دیا گیا تھا۔

 تخلیقی ستون (Pillars of creation) کائنات میں وہ مقام ہے جہاں نئے ستارے بنتے ہیں جبکہ پرانے ستارے اپنی طبعی عمر پوری کرنے کے بعد فنا ہو جاتے ہیں۔ نئے ستاروں کے جنم لینے کے باعث انہیں ستاروں کی نرسریاں بھی کہا جاتا ہے۔

اب ان کی تصاویر کو جیمز ویب اسپیس ٹیلی اسکوپ کی مدد سے دوبارہ لیا گیا ہے جو زیادہ واضح، گہری اور رنگین ہیں، انہیں نئے سرے سے پیش کیا گیا ہے۔

ان تصاویر میں گیس اور دھول کے گھنے بادلوں کے وسیع تصادم دکھائے گئے ہیں جہاں ایگل نیبولا میں نئے ستارے وجود میں آ رہے ہیں۔

ناسا کا کہنا ہے کہ ان تصاویر کی مدد سے محققین کو نئے بننے والے ستاروں کی زیادہ درست گنتی کے ساتھ ساتھ اس میں گیس اور دھول کی مقدار کی نشاندہی کرکے ستاروں کی تشکیل کے نظریے کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی۔

ناسا کے مطابق ستونوں کے بالکل باہر نمودار ہونے والے چمکدار سرخ مدارچے ستارے ہیں جہاں گیس اور دھول کی بہت بڑی گرہیں اپنی کشش ثقل کے نیچے گر رہی ہیں اور آہستہ آہستہ گرم ہوگئی ہیں۔

امریکی خلائی ایجنسی نے کہا کہ لہراتی سرخ لکیریں جو کچھ ستونوں کے کنارے پر لاوے کی طرح نظر آتی ہیں وہ ستاروں سے مادے کا اخراج ہیں جو اب بھی گیس اور دھول کے اندر بن رہے ہیں اور ان کی عمر صرف چند سو ہزار سال ہے۔

یاد رہے اس سے قبل، ناسا نے کاسمک ببل ریپ- ببل نیبولا کی ایک تصویر شیئر کی تھی جو کہ ناسا کی ہبل اسپیس ٹیلی اسکوپ سے لی گئی تھی۔

کیسیوپیا ستاروں کا یہ جھرمٹ زمین سے 7,100 نوری سال کے فاصلے پر ہے۔ ببل نیبولا سب سے مشہور ستاروں کے بلبلوں میں سے ایک ہے۔



اپنی رائے کا اظہار کریں