غبارے اڑانا بھی دہشت گردی ہو گئی: حلیم عادل شیخ

حلیم عادل شیخ—فائل فوٹو
حلیم عادل شیخ—فائل فوٹو

پی ٹی آئی سندھ کے صدر حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ غبارے اڑانا بھی دہشت گردی ہو گئی۔

گرفتاری سے قبل صدر پی ٹی آئی سندھ حلیم عادل شیخ نے اپنے وکیل کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ انصاف کے حصول کے لیے سندھ ہائی کورٹ آئے تھے، چیف جسٹس سندھ ہائی کورٹ نے حکم دیا ہے کہ پولیس کو احاطے سے ہٹایا جائے۔

انہوں نے کہا کہ میں پیپلز پارٹی کی کرپشن کو بے نقاب کرتا رہا ہوں، میرے خلاف جھوٹے مقدمات بنائے گئے، غبارے اڑانا بھی دہشت گردی ہو گئی، مجھے ڈنڈا اٹھایا ہوا دکھایا گیا، ڈنڈا چلاتے کوئی ویڈیو نہیں ہے۔

حلیم عادل شیخ کا کہنا ہے کہ آفتاب صدیقی بھی نامزد تھے مگر وہ پریس کانفرنس کر کے نکل گئے، جو لوگ پریس کانفرنس کرتے ہیں وہ نکل جاتے ہیں، ہم اور ہمارے ساتھی اب بھی مقدمات بھگت رہے ہیں۔

رہنما پی ٹی آئی نے کہا کہ اس وقت ملک میں کوئی آئین و قانون نہیں، 6 ستمبر پر شہداء اور غازیوں کو سلام پیش کریں گے، ہم اس کے کارکن ہیں جس نے وطن سے محبت کرنا سکھایا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ برے وقت میں جو پارٹی چھوڑتا ہے لوگ اس پر لعنت بھیجتے ہیں، برے وقت میں کوئی غیرت مند پارٹی نہیں چھوڑ سکتا۔



اپنی رائے کا اظہار کریں