روس اور ترکیہ کے صدور کی تین گھنٹے طویل ملاقات، اناج معاہدے کی بحالی زیر بحث

روس اور ترکیہ کے صدور کی تین گھنٹے طویل ملاقات، اناج معاہدے کی بحالی زیر بحث

روس کے شہر سوچی میں صدر ولادیمیر پیوٹن اور ترک صدر رجب طیب اردوان کے درمیان تین گھنٹے طویل ملاقات ہوئی۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق ملاقات کے بعد دونوں صدور نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔

صدر پیوٹن نے کہا کہ آج کی بات چیت تعمیری اور کاروباری طرز پر رہی، ہم باہمی معاملات میں مقامی کرنسی کے استعمال میں اضافہ کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ یوکرین تنازع اور اناج برآمدات پر بھی بات ہوئی، روس نے کبھی یوکرین تنازع پر بات چیت سے انکار نہیں کیا۔

انہوں نے کہا کہ روس سے طے کی گئی شرائط پوری ہوتے ہی اناج معاہدے میں واپس آجائیں گے۔

اس موقع پر ترک صدر طیب اردوان نے کہا کہ صدر پیوٹن سے زراعت، سیاحت، مالیاتی اور توانائی کے شعبوں میں تعاون پر بات ہوئی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ یوکرین اناج برآمدات معاہدے کی بحالی کا حل جلد نکلنے کی امید ہے، اناج معاہدے کیلئے یوکرین کو روس کے خلاف اپنا مؤقف نرم کرنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ ترکیہ غریب ممالک تک اناج کی فراہمی چاہتا ہے، روس سے بھی یہ بات کی ہے، روس نے غریب ممالک تک اناج کی رسائی پر کام کرنے کیلئے اتفاق کیا ہے۔



اپنی رائے کا اظہار کریں