محمد الفائد انتقاماً لیڈی ڈیانا کے سسر بننا چاہتے تھے: صحافی

برطانیہ کی معروف کاروباری شخصیت مصری نژاد محمد الفائد—فائل فوٹو
برطانیہ کی معروف کاروباری شخصیت مصری نژاد محمد الفائد—فائل فوٹو

برطانوی صحافی کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ گزشتہ دنوں انتقال کر جانے والی برطانیہ کی معروف کاروباری شخصیت مصری نژاد محمد الفائد برطانوی پاسپورٹ لینا چاہتے تھے، نہ ملنے پر اسٹیبلشمنٹ سے نالاں تھے اور انتقاماً برطانیہ کے مستقبل کے بادشاہ کی ماں (لیڈی ڈیانا) کے سسر بننا چاہتے تھے۔

برطانوی صحافی کے مطابق محمد الفائد افسردہ رہتے تھے کہ انہوں نے بیٹے کو لیڈی ڈیانا کے ساتھ ہوٹل سے جانے کیوں دیا۔

برطانوی صحافی نے بتایا ہے کہ دودی الفائد اور شہزادی ڈیانا کار حادثے کے روز پیرس میں محمد الفائد کے ہوٹل میں تھے۔

برطانوی صحافی کا کہنا ہے کہ شہزادی ڈیانا ہوٹل کے باہر صحافیوں کے جمع ہونے سے پریشان ہو گئی تھیں، صحافیوں کے سبب دودی چاہتے تھے کہ ڈیانا کو ہوٹل سے اپنے فلیٹ لے جائیں۔

برطانوی صحافی کے مطابق ریٹز ہوٹل کے خفیہ راستے سے باہر جانے کی اجازت دینے کا اختیار محمد الفائد کے پاس تھا۔

ہوٹل سے نکلتے ہی دودی الفائد اور شہزادی ڈیانا کی گاڑی پیرس میں حادثے کا شکار ہو گئی تھی۔

واضح رہے کہ برطانوی معروف کاروباری شخصیت مصری نژاد محمد الفائد 30 اگست کو 94 برس کی عمر میں انتقال کر گئے، ان کی نمازِ جنازہ لندن کے ریجنٹس پارک مسجد میں ادا کی گئی۔

غیر ملکی خبر رساں اداروں کے مطابق محمد الفائد پرتعیش اشیاء کے اسٹور Harrods اور فٹبال کلب Fulham کے سابق مالک تھے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق معروف کاروباری شخصیت کا انتقال ان کے بیٹے دودی الفائد (Dodi Fayed) کی موت کے 26 برس بعد ہوا ہے۔

دودی الفائد برطانیہ کی شہزادی ڈیانا کے ساتھ کار حادثے میں جاں بحق ہوئے تھے۔



اپنی رائے کا اظہار کریں