پرتگال میں والد کی لاپرواہی سے 10 ماہ کی بچی گاڑی میں ہلاک

فائل فوٹو
فائل فوٹو

پُرتگال میں والد کی لاپرواہی کی وجہ سے 10 ماہ کی بچی کی گاڑی میں موت واقع ہوگئی۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق والد بچی کو گاڑی میں ہی بھول کر چلا گیا اور اس وقت وہاں کا درجہ حرارت 26 ڈگری سینٹی گریڈ تھا۔

پرتگالی اخبار کے مطابق والد یونیورسٹی کا لیکچرار ہے اور 12 ستمبر کی صبح وہ بیٹی کو نرسری چھوڑنا بھول گیا اور سیدھا اپنی نوکری پر چلا گیا۔

اخبار کے مطابق 7 گھنٹے بعد واپس آنے پر والد اپنی بیٹی کو گاڑی کی پچھلی سیٹ پر بیہوش دیکھ کر حیران رہ گیا اور اس نے فوراً اسے اٹھانے اور بچانے کی کوشش شروع کردی۔

اس دوران ایمرجنسی ٹیموں کو بھی موقع پر بلالیا گیا جنہوں نے موقع پر ہی بچی کی موت کی تصدیق کردی۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق اسی دوران بچی کی والدہ بھی موقع پر پہنچ گئی تھیں جس کے بعد ایمرجنسی ٹیموں کی جانب سے والدین کو دلاسہ دیا گیا۔

رپورٹس کے مطابق 12 ستمبر کو پیش آئے واقعے کے دن علاقے کا درجہ حرارت 26 ڈگری سینٹی گریڈ تھا تاہم اندازہ لگایا گیا ہے کہ گاڑی بند ہونے کی وجہ سے اس کے اندر کا درجہ حرارت 50 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا ہوگا۔

غیرملکی میڈیا کے مطابق تفتیشی اہلکاروں کا ماننا ہے کہ بچی گاڑی میں سو رہی تھی اور اسی وجہ سے اس کا والد اسے گاڑی میں ہی بھول گیا، بچی کی پوسٹمارٹم کے بعد مزید حقائق سامنے آئیں گے۔



اپنی رائے کا اظہار کریں