حجاب معاملے پر زیرِ حراست ہلاک ہونے والی مہسا امینی کی پہلی برسی

فائل فوٹو
فائل فوٹو

ایران میں حجاب کے معاملے پر زیرِ حراست ہلاک ہونے والی لڑکی مہسا امینی کی پہلی برسی کے موقع پر ملک بھر میں سیکیورٹی فورسز کو تعینات کردیا گیا ہے۔

برطانوی میڈیا کے مطابق امریکا نے 29 ایرانی شخصیات اور اداروں پر پابندی عائد کردی ہے جبکہ یورپی یونین نے 4 ایرانی عہدیداروں کو بلیک لسٹ میں شامل کرلیا ہے۔

دوسری جانب امریکا کے صدر جوبائیڈن نے کہا ہے کہ ایران کے عوام ہی اپنے ملک کی قسمت کا فیصلہ کریں گے، امریکا ایرانی عوام کے ساتھ کھڑے رہنے کے لیے پُرعزم ہے۔

یاد رہے کہ مہسا امینی ایرانی ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی پر 16 ستمبر کو پولیس کی حراست میں ہلاک ہوگئی تھیں جس کے بعد ایران بھر میں مظاہروں کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا۔

مہسا امینی کی موت کے بعد مظاہروں میں 500 سے زائد افراد ہلاک ہوئے تھے۔



اپنی رائے کا اظہار کریں