پاکستان کے تین کوہ پیما دنیا کی آٹھویں بلند ترین چوٹی ماؤنٹ مناسلو سر کرنے کیلئے تیار

کولاج فوٹو: فائل
کولاج فوٹو: فائل

پاکستان کے نوجوان کوہ پیما شہروز کاشف دنیا کی آٹھویں بلند ترین چوٹی ماؤنٹ مناسلو کو از سر نو سر کرنے کےلیے تیار ہیں۔ پاکستان کے سرباز علی بھی مناسلو کی ’ٹرو سمٹ‘ پر جائیں گے جبکہ پاکستان کی خاتون کوہ پیما نائلہ کیانی اگلے ہفتے مناسلو سر کرنے کی مہم شروع کردیں گی۔

نیپال میں واقع ماونٹ مناسلو کی بلندی 8163 میٹر ہے اور یہ دنیا کی آٹھویں بلند ترین چوٹی ہے۔

پاکستان کے شہروز کاشف اور سرباز علی نے 2021 میں ماونٹ مناسلو کو سر کرلیا تھا لیکن ان کے سمٹ کے بعد انکشاف ہوا تھا کہ پہاڑی کا بلند ترین پوائنٹ وہ نہیں جہاں اب تک ہر کوہ پیما جارہا تھا بلکہ اس سے 10 میٹر آگے ہے۔

گو کہ شہروز کاشف اور ان کے ساتھ سرباز علی کی سمٹ کو قانونی تسلیم کرلیا گیا تھا لیکن دونوں ماونٹینیئرز نے اعلان کیا تھا کہ وہ اصولوں کی پابندی کرتے ہوئے حقیقی سمٹ تک جائیں گے۔

پاکستان کے ساجد سدپارہ نے گزشتہ سال مناسلو کے حقیقی سمٹ کو سر کیا تھا۔

شہروز کاشف اور سرباز علی اس وقت مناسلو بیس کیمپ پر ہیں اور وہ اپنی سمٹ پش کےلیے روٹیشن مکمل کرچکے ہیں۔

پاکستان کی خاتون کوہ پیما نائلہ کیانی بھی آٹھ ہزار میٹر سے بلند اپنی نویں چوٹی سر کرنے کےلیے مناسلو پہنچ چکی ہیں۔

نائلہ کیانی 8 ہزار میٹر سے بلند 8 چوٹیاں سر کرنے والی واحد پاکستانی خاتون ہیں اور وہ مناسلو سر کرنے والی بھی پہلی پاکستانی خاتون ہوجائیں گی۔

نائلہ کیانی اب تک ماؤنٹ ایوریسٹ، کے ٹو، نانگا پربت، گیشربرم ون، گیشر برم ٹو، اناپورنا، لوٹسے اور براڈ پیک سر کرچکی ہیں۔

تینوں پاکستانی کوہ پیما پیر کو اپنی حتمی مہم کا آغاز کریں گے اور یہ تینوں 20 ستمبر تک مناسلو کے ٹاپ پر پہنچنے کا ہدف رکھتے ہیں۔



اپنی رائے کا اظہار کریں