اسرائیل، سعودی عرب امن معاہدے کے قریب پہنچ چکے ہیں، اسرائیلی وزیراعظم

اسرائیل اور سعودی عرب کے درمیان امن ایک نئے مشرق وسطیٰ کو تشکیل دے گا: بینجمن نتن یاہو
اسرائیل اور سعودی عرب کے درمیان امن ایک نئے مشرق وسطیٰ کو تشکیل دے گا: بینجمن نتن یاہو

اسرائیل کے وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو کا کہنا ہے کہ اسرائیل اور سعودی عرب امن معاہدے کے قریب پہنچ چکے ہیں، سعودی عرب کے ساتھ تعلقات قائم کرنے سے نئے مشرق وسطی کا جنم ہوگا۔

اسرائیلی وزیراعظم نے آج اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج ہمارے پاس یہ آپشن موجود ہے کہ ہم لامحدود ترقی اور امید کیلئے تاریخی امن سے مستفید ہوں یا پھر دہشتگردی اور ناامیدی کی خوفزدہ جنگ سے تکلیف اٹھائیں۔

انہوں نے کہا کہ میں نے 5 سال پہلے اسی جگہ خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ جلد وہ دن آئے گا جب اسرائیل مصر اور اردن سے آگے نکل کر دیگر عرب ہمسایوں کے ساتھ امن کو وسعت دے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ اسرائیل اور عرب ریاستوں کے درمیان مزید امن اسرائیل اور فلسطین کے مابین امن کے مواقع بڑھائے گا۔

وزیراعظم نیتن یاہو نے کہا کہ ابراہیم معاہدوں نے امن کے ایک نئے دور کا آغاز کیا ہے لیکن میں سمجھتا ہوں کہ ہم ایک مزید ڈرامائی پیشرفت کے بالکل قریب ہیں، اسرائیل اور سعودی عرب کے درمیان تاریخی امن معاہدہ۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ امن معاہدہ عرب اسرائیل تنازع کو ختم کرنے کیلئے دیرپا ثابت ہوگا، دیگر عرب ریاستیں بھی اسرائیل کے ساتھ تعلقات بحال کریں گے، فلسطین کے ساتھ امن کے مواقع بڑھیں گے، یہودیت اور اسلام، یروشلم اور مکہ کے درمیان مفاہمت کو وسعت دینے میں مدد ملے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسرائیل امن اور خوشحالی کا نیا پُل بن سکتا ہے، اسرائیل اور سعودی عرب کے درمیان امن ایک نئے مشرق وسطیٰ کو تشکیل دے گا۔



اپنی رائے کا اظہار کریں